Home / جاگو ڈیلس نیوز / دنیا بھر میں قوالیوں کے سو سے زائد کنسرٹ مداحوں کے بے حد اسرار پر ترتیب دئیے گئے ، راحت فتح علی خاں

دنیا بھر میں قوالیوں کے سو سے زائد کنسرٹ مداحوں کے بے حد اسرار پر ترتیب دئیے گئے ، راحت فتح علی خاں

ڈیلس (انٹرویو:راجہ زاہد اختر خانزادہ)استاد راحت فتح عل خان  کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں قوالیوں کے سو سے زائد کنسرٹ عوام الناس اور مداحوں کے بے حد اسرار پر ترتیب دئیے گئے ہیں جن کا کہنا تھا کہ وہ قوالی سننے کیلئے بے چین ہیں، اس لئے میں نے اور سلمان احمد نے مل کر دنیا بھر میں قوالیوں کی یہ محفلیں سجانے کا سوچا، ریاست ٹیکساس کے دارالحکومت آسٹن میں جیو اور جنگ سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مداحوں کی جو سوچ تھی اس کی بنیاد پرہم نے سوچا کہ قوالی کو بین الاقوامی سطح پر لے کر جایا جائے بالکل اس طرح جس طرح میرے استاد استاد نصرت فتح علی خان نے اس پر کام کیا، انہوں نے کہا کہ اس ضمن میں ہم نے سب سے پہلے اس کا البم جسٹ قوالی ترتیب دیا ، اس طرح ہم نے جس طرح البم کا نام جسٹ وقوالی رکھا تو اس ٹور کا نام بھی جسٹ قوالی رکھا گیا، انہوں نے کہا کہ اس خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے میں بہت سارے لوگوں کی محنت شامل ہے، جس میں سلمان احمد، ٹیم اور انتظامیہ پیش پیش ہیں،خصوصاً امریکہ میں جسٹ قوالی کی محفلیں لانے کیلئے راحت فتح علی خان نے کہا کہ ہمارے قوالی کے کنسرٹ بہت اچھے جا رہے ہیں، ہر جگہ پر یہ سولڈ آئوٹ ہیں اور عوام الناس کو یہ بے حد پسند آ رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ قوالی کنسرٹ منعقد کرنے کے بعد ہمیں یہ محسوس ہوا کہ لوگ قوالی سننے کیلئے بے تاب بھی ہیں او ر ہم سے بہت زیادہ توقعات بھی رکھتے ہیں، کہ ان کو ہر صورت میں قوالی چاہیے، خصوصاً ہماری فیملی کیلئے بھی یہ بات بہت اہم ہے، ایک سوال کے جواب میں راحت فتح علی خان کا کہنا تھا کہ قوالی میںساز انتہائی کم ہوتے ہیں ،دو ہارمونیم، ایک طبلہ اس طرح دوسرے معروف قوال جیسے کہ میرے استاد نصرت فتح علی خان اور صابری برادران بھی ان تین آلات موسیقی کے ساتھ ہی محفل سماع منعقد کرتے تھے، اس لیے جتنے ساز کم ہوتے ہیں اس میں آواز اتنی ہی کھل کر سامنے آتی ہے، جو الفاظ ادا کئے جاتے ہیں وہ کھل کر سامعین کی سماعتوں کو اثر انداز کرتے ہیں اور سامعین کو معلوم ہوتا ہے کہ گائیک اور قوال کیا شعر پڑھ رہا ہے، لفظ اور تلفظ کیسا ہے ، اس لئے قوالی کی جو جڑ ہے اس میں کم سازوں کے ساتھ قوالی پڑی جاتی ہے ، اس طرح ساز ندے اور کورس سنگر جو کہ تعداد میں12ہوتے ہیں وہ ایک چیز کو ایک ساتھ پڑھتے ہیں، اس طرح لوگوں کا اس پر بہت اچھا اثر پڑتا ہے، استاد راحت نے مزید کہا کہ قوالی کے ہونے والے ان کنسرٹ میں جو شو ہم عام طور پر کرتے ہیں، اس میں انرجی اور طاقت چار شوز کے مقابلے میں صرف ہوتے ہے، اس طرح تین شوز 12شوز کے برابر ہیں، انہوں نے کہا کہ قوالی ایک امن پسند میوزک ہے اس میں پاپ بھی ہے اور کلام بھی، دونوں چیزیں قوالی کا مرکب ہیں، انہوں نے کہا کہ اس میں وجدانی کیفیت بھی شامل ہوتی ہے، جس طرح ہیوسٹن میں لوگ مست ہو گئے اور اس طرح کا احساس کسی اور میوزک میں نہیں ہوتا، استاد راحت فتح علی خان نے اپنے تمام مداحوں کیلئے دئیے ایک پیغام میں کہا کہ ہم نئی کمپوزیشن اور نئے کلام نئی غزلیات ہم آئندہ لے کر آ رہے ہیںاور قوالی کیلئے جو ایک فاصلہ محسوس کیا جاتا تھا،(جو کہ تھا نہیں) اس کو ہم پُر کرینگے، انہوں نے کہا کہ قوالی اسلام کا پیغام ہے اور یہ پیغام بھائی چارہ، محبت، امن ہے اور اس کو قوالی کے ذریعے ہی ہم آگے تک پھیلانے کی کوشش کررہے ہیں، اس موقع پر راحت علی خان کے منیجر سلمان احمد نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جسٹ قوالی کی بین الاقوامی محفلیں ترتیب دینے کیلئے خان صاحب اور ٹیم نے بھر پور کام کیا، تاہم آئیڈیا ہم لے کر ان کے ساتھ ڈسکس کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ پچھلے سال ہم نے فرسٹ اور سیکنڈ ہاف کا جو پروگرام ترتیب دیا تھا اس میں میلوڈی اور قوالی رکھی گئی تھیں، تاہم یہ سال جسٹ قوالی ہے، دنیا بھر میں شو ہو رہے ہیں، اس میں آپ نے یہ چیز دیکھی کہ صرف طبلہ، ہارمونیم اور ہمنوا ساتھ ہیں اور یہ محنت اور اس پر کام2017ء میں شروع کیا گیا تھا جو آج آپ کے سامنے ہے، انہوں نے کہا کہ جسٹ قوالی البم ایک دو ماہ میں ریلیز ہو گا، انہوں نے کہا کہ ہم 2020ء کی پلاننگ کررہے ہیں ،ایڈوانس پلاننگ میں خان صاحب کی لگن، جذبہ ، ان پروگراموں کو پائیہ تکمیل تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کررہا ہے،انہوں نے کہا کہ خان صاحب قوال ہیں اور قوال گھرانے سے ہیں، جس کے پیار میں وہ اس ورثہ کو آگے لیکر جا رہے ہیں، کہ اس خاندان کی چھ سو سال پرانی روایت ہے اس کو آگے لایا جائے، انہوں نے کہا کہ آج کے دور میں جب میوزک دوسری طرف جا رہا ہے تو اس دور میں قوالی کے ذریعے وہ پیغام دیا جا رہا ہے جس سے لوگ اس کی طرف واپس آ رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ہماری گاڑی کا خان صاحب انجن ہیں، اس لئے ہم سب کی دعائیں ان کے ساتھ ہیں، انہوں نے کہا کہ پاکستان میں تبدیلی کی بات ہو رہی ہے تو خان صاحب نے جو مثبت چہرہ دنیا کے سامنے پیش کیا ہے تو اس کو بھی سامنے رکھا جائے کیونکہ جہاں جہاں جا کر یہ پرفارم کررہے ہیں وہاں پاکستانی ،ہندوستانی،بنگلہ دیشی اور دیگر ممالک کے جو بھی لوگ ہوں ہر دنیا کے مین اسٹریم کے لوگوں میں یہ پاکستان کا اچھا ،بہتر اور امن پسند چہرہ پیش کررہے یں جس سے پاکستان کا نام بھی روش ہو رہا ہے اور اس جدید دور میں خان صاحب بہتر دنیا بھر میں کوئی سفیر نہیں ہے۔

Check Also

مڈٹرم انتخابات نے ملک میں تبدیلی کا عندیہ دیدیا ہے، کمیونٹی متحرک ہوئی تو کئی برج پلٹ گئے،کانگریس وومین ایڈی برنیس جانس

مڈٹرم انتخابات نے ملک میں تبدیلی کا عندیہ دیدیا ہے، کمیونٹی متحرک ہوئی تو کئی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *